حکومت کشمیر کونسل معاملہ پر اپوزیشن کو اعتماد میں لے،بیرسٹر سلطان

اسلام گڑھ(نامہ نگار)پی ٹی آئی کشمیر کے صدر وسابق وزیر اعظم آزاد کشمیر بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے کہا ہے کہ ن لیگ کی حکومت میرپور کے اداروں کی مرکزیت کو ختم کرنے سے باز رہے نہیں تو اس کے بھیانک نتائج حکومت کو بھگتنا پڑیں گے، تعمیر وترقی کے دعویداروں نے ریاست کو مسائل کی دلدل میں دھکیل دیا ہے۔مودی کے یاروں کا ریاست میں کوئی ٹھکانہ نہیں ہے۔شہداء کے خون سے غداری کرنے والے جلد ذلیل وخوار ہوں گے۔تارکین وطن ملک کے سفیر اور سپاہی ہیں اور ان کی خدمت کو کشمیری قوم قدر کی نگاہ سے دیکھتی ہے۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے سابق میڈیا ایڈوائزر صدر آزاد کشمیر خالد محمود خالق سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔اس موقع پر سابق وزیر حکومت چوہدری ارشد بھی موجود تھے۔سابق وزیر اعظم بیرسٹر سلطان محمود چوہدری نے مذید کہا کہ ن لیگ کی حکومت میرپور کے وسائل کو لوٹنے اور میرپور کے اداروں کی مرکزیت کو ختم کرنے سے باز رہے۔میرپور کے اداروں اور عوام کے حقوق کا دفاع کرنا میری اولین ذمہ داری ہے۔کشمیر کونسل کے خاتمے کے لئے حکومت خودساختہ فیصلوں کی بجائے اپوزیشن کو اعتماد میں لے۔تحریک انصاف پاکستان و آزاد کشمیر میں عوام کے حقوق کی جنگ لڑرہی ہے۔پاکستان میں ووٹ کی طاقت سے عوام کرپشن کے بتوں کو مسترد کریں اور نئے پاکستان کی بنیاد رکھنے میں تحریک انصاف کا ساتھ دیں کیونکہ تحریک انصاف ہی واحد جماعت ہے جس کے پاس مسلمہ لیڈرشپ اور عوامی مسائل کے حل کا روڈ میپ موجود ہے۔مسئلہ کشمیر کا حل بھی تحریک انصاف کے دور حکومت میں ہو گا۔اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے سابق میڈیا ایڈوائزر صدر آزاد کشمیر خالد محمودخالق نے بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کی خراج تحسین پیش کرتے ہوئے کہا کہ بیرسٹر سلطان محمود چوہدری بین الاقوامی دنیا میں مظلوم ومحکوم کشمیریوں کی آواز ہیں ۔مسئلہ کشمیر کو اجاگر کرنے میں بیرسٹر سلطان محمود چوہدری کا کردار سب سے نمایاں ہے۔ن لیگ آزاد کشمیر کی حکومت تارکین وطن کشمیریوں کے مسائل حل میں سنجیدہ نظر نہیں آرہی ۔پونے دو سالوں سے تارکین وطن کو طفل تسلیوں سے ٹرخایا جارہا ہے۔آج تارکین وطن کی جائیدادیں محفوظ نہیں ہیں۔لینڈ مافیا کی ہر سو چاندی ہے،تارکین وطن دلبرداشتہ ہو چکے ہیں اور تحریک انصاف سے امیدیں لگائے بیٹھے ہیں ۔